نئی گاڑی کی خوشبو کینسر کے خطرات میں کسیے اضافہ کرسکتی ہے؟

کینسر کے خطرات

نیوزٹوڈے:  ماہرین نے صارفین کو خبر دار کیا ہے کہ نئی گاڑی کی خوشبو لوگوں کے کینسر کا سبب بن سکتی ہے۔ سائنسدانوں نے 12  دنوں تک باہر کھڑی رہنے والی گاڑی کا مشاہدہ کیا جس کے بعد اس کے اندر کی ہوا کا اچھی طرح جائزہ لیا گیا۔ مشاہدہ کے بعد معلوم ہوا کہ، گاڑی کی فضا میں ایک اور کارسینو جن (کینسر کا سبب بننے والا مادہ) کی مقدار زیادہ ہوتی ہے۔ وہ کیمیکل لیول چینی قومی حفاظتی معیارات سے کافی اوپر تھے۔ فارملڈہائیڈ کا ارتکاز، جو کہ کینسر کا باعث بننے والا ایک معروف مرکب ہے اور اکثر مرنے والوں کو محفوظ رکھنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے، معیارات سے 34.9 فیصد زیادہ ہے۔ ایک اور خطرناک کارسنجن، acetaldehyde، معیار سے 61% زیادہ تھا۔ کیمیکل کا ارتکاز 223.5 مائیکروگرام فی کیوبک میٹر پر پہنچ گیا، جو قابل قبول حد سے دوگنا ہے۔

تحقیق میں کہا گیا ہے کہ جو لوگ روزانہ صرف 30 منٹ ایک کار میں گزارتے ہیں وہ ان میں سے کافی مقدار میں سرطان پیدا کر کے انہیں خطرے میں ڈال سکتے ہیں۔نیز، گرم موسم کے ساتھ کیمیکلز کی تعداد میں اضافہ ہوا۔ تحقیق میں کہا گیا ہے کہ جب کار میں درجہ حرارت بڑھتا ہے تو ان غیر مستحکم کیمیکلز کی زیادہ مقدار خارج ہوتی ہے۔روزانہ ایک کار میں ڈیڑھ گھنٹہ گزارنا کسی شخص کو تجویز کردہ حد سے زیادہ فارملڈہائیڈ مرکبات سے بے نقاب کرتا ہے۔

user
صباحت عابد

تبصرے

بطور مہمان تبصرہ کریں:
+