ہڈیوں کو ہمیشہ مضبوط رکھنا چاہتے ہیں؟ تو یہ آسان طریقہ اپنا لیں

ہڈیوں کی مضبوطی

نیوزٹوڈے:  خبر رساں ادارہ نیوزٹوڈے کے مطابق، عمر بڑھنے کے ساتھ ہڈیوں کی مضبوطی کو برقرار رکھنا بہت اہم ہوتا ہے۔ جب ہم 30 سال کے ہوتے ہیں، تو ہماری ہڈیوں کی نشونما اپنے عروج پر پہنچ جاتی ہے۔ اگر اس مرحلے کے بعد ہم ہڈیوں کی صحت کا خاص خیال نہ رکھیں تو عمر کے ساتھ ہڈیوں کی مضبوطی میں کمی آتی ہے، جس سے کمزوری اور دیگر مسائل کا خطرہ بڑھ سکتا ہے۔ لیکن خوش قسمتی سے ہڈیوں کی صحت کا خیال رکھنا آسان ہوتا ہے۔

چند بنیادی چیزوں کا خیال رکھ کر، آپ عمر کے ساتھ اپنی ہڈیوں کو مضبوط رکھ سکتے ہیں۔ کیلشیم ہڈیوں کی صحت کے لیے انتہائی اہم ہے۔ یہ معدنیات ہڈیوں کو مضبوط اور موٹا کرتا ہے، اور اگر جسم میں کیلشیم کی کمی ہو تو جسم ہڈیوں سے کیلشیم کو کھینچتا ہے۔کیلشیم کی کمی کے باعث ہڈیاں کمزور ہوتی ہیں اور فریکچر کا خطرہ بڑھتا ہے۔ کیلشیم کی زیادتی دہی، دودھ، چنوں اور مچھلی جیسی غذاؤں سے حاصل کی جا سکتی ہے۔ اس کے علاوہ ڈاکٹر کے مشورے سے کیلشیم کے سپلیمنٹس بھی لیے جا سکتے ہیں۔

وٹامن ڈی بھی ہڈیوں کی صحت کے لیے ضروری ہے کیونکہ یہ کیلشیم کے جذب ہونے میں مدد کرتا ہے۔ وٹامن ڈی کی کمی سے جسم ہڈیوں کو مضبوط نہیں بنا پاتا۔ وٹامن ڈی سورج کی روشنی، مچھلی، انڈے، فورٹیفائیڈ دودھ اور سپلیمنٹس سے حاصل کیا جا سکتا ہے۔

جسمانی سرگرمیاں بھی ہڈیوں کے لیے فائدہ مند ہوتی ہیں۔ ورزش کے عادی افراد میں ہڈیوں کا حجم عمر کے ساتھ کم نہیں ہوتا۔ ورزش سے مسلز بنتے ہیں جو جسمانی توازن کو بہتر کرتے ہیں اور گرنے کے خطرے کو کم کرتے ہیں۔ وزن اٹھانے والی ورزشیں، جاگنگ، پش اپس، تیز چہل قدمی، رقص اور سیڑھیاں چڑھنے جیسی ورزشیں ہڈیوں کے لیے فائدہ مند ہوتی ہیں۔

تمباکو نوشی سے گریز کریں کیونکہ یہ ہڈیوں کی صحت کو متاثر کرتی ہے۔ تمباکو میں موجود نکوٹین اور دیگر کیمیکلز سے ہڈیاں بنانے والے خلیات کی نشونما سست ہو جاتی ہے، جبکہ ہڈیوں تک خون کی روانی بھی محدود ہوتی ہے۔چینی کا زیادہ استعمال بھی ہڈیوں کے لیے نقصان دہ ہوتا ہے۔ میٹھے مشروبات، بسکٹ اور چینی سے بنی ہر غذا کے بہت زیادہ استعمال سے پیشاب کے راستے کیلشیم اور میگنیشم کا اخراج ہوتا ہے، جس سے ہڈیاں کمزور ہوتی ہیں۔الکحل کا استعمال بھی ہڈیوں کے لیے نقصان دہ ہوتا ہے۔ الکحل کے استعمال سے گرنے کا خطرہ بھی بڑھتا ہے، جس سے ہڈیاں ٹوٹنے کا خطرہ بڑھتا ہے۔

user
صباحت عابد

تبصرے

بطور مہمان تبصرہ کریں:
+