پیوٹن کا اگلا منصوبہ نیٹو کو کنٹرول میں لینے کیلیے اڑیسہ پر قبضہ کرنا

10 May,2022

روس ، یوکرین جنگ میں  پیوٹن کا مشن ہے تین بڑے شہروں مریوپول ، اڑیسہ اور خارکیو پر قبضہ کرنا ۔  پیوٹن کیلیے اڑیسہ بہت اہم ہے کیونکہ یہ ایک بندرگاہ ہے اورمالدووا کیلیے راستہ اسی بندرگاہ سے ہو کر گزرتا ہے ۔ اڑیسہ کی بندرگاہ سے شپنگ اور ٹرانسپورٹ سب سے زیادہ ہوتی ہے ۔ اڑیسہ کو یوکرین کا دروازہ بھی کہا جاتا ہے ۔ اڑیسہ کے بعد مالدووا پر حملہ روس کیلیے بہت آسان ہو جاۓ گا اور اگر روس نے اڑیسہ پر قبضہ کر لیا تو بلیک سی کا کنٹرول روس کے ہاتھ میں آ جاۓ گا ۔

 

اڑیسہ اس لیے بھی بہت اہم ہے کیونکہ ایسی نہر جو ایشیا اور یورپ کو جوڑتی ہے اڑیسہ سے ہو کر گزرتی ہے ۔ اور اگر یوکرین اس نہر کو کھو دیتا ہے تو اس کی سمندری تجارت بند ہو جاۓ گی ۔ اور روس اڑیسہ پر قبضہ کر کے نیول آپریشن بھی لاؤنچ کر سکتا ہے ۔ اڑیسہ پر روس نے حملوں کی رفتار بڑھا دی ہے  اور اڑیسہ پر پچھلے 48 گھنٹوں کے دوران کئ میزائل حملے کیے گۓ ہیں ۔ اڑیسہ کے بعد کیو پیوٹن کے نشانے پر ہے اور اگر پیوٹن ان تینوں شہروں پر کنٹرول کر لیں گے تو نیٹو خود بخود ان کے کنٹرول میں آ جاۓ گا کیونکہ نیٹو اور یورپ تک پہنچنے والے تینوں دروازے ان کیلیے کھل جائیں گے ۔

 

مزید پڑھیں: پینٹاگون کے فیصلے نے یوکرین کو روس کے سامنے جھکنے پر مجبور کر دیا
 

Share This Article